Wednesday, February 02, 2011

ہندوستان نے جاسوسی کے الزام میں گرفتار چینی عورت کو رہا کر دیا


نئی دہلی : ہندوستان میںمیزائیل تعیناتی کی جاسوسی کرنے کے الزام میں یکم جنوری کو گرفتار کی جانے والی چینی عورت کو ہندوستانی ایجنسیوں نے رہا کر دیاحالانکہ وہ ایک چینی ٹمبر کمپنی کی ملازم کے طور پر ہندوستان آئی تھی لیکن اس نے ناگا باغی لیڈر تھوئنگ لینگ موویاسے ہانگ کانگ کے ٹی وی رپورٹر کی حیثیت سے ملاقات کی تھی۔ اس عورت کا نام وینگ کنگ ہے اور اس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ وہ بغیر کسی اجازت کے این ایس سی این آئی ایم کے ہیڈ کوارٹر میں جا کر موویا سے ملی تھی۔ لیکن این ایس سی این آئی ایم نے ایسی کسی ملاقات سے انکار کیا ہے۔میدیا کی خبروں کے مطابق ہندوستان کے پاس ایسے پختہثبوت ہیں کہ چین نے شملا مشرقی ہندوستان میں سرحد سے متصل علاقوں میں نصب لمبی دوری کے میزائیلوں سے متعلق اطلاعات بہم پہنچانے کیذمہ داری شمال مشرقی خطہ کی انتہا پسند تنظیموں کو سونپ رکھیہے۔خفیہ ایجنسیوں کے مطابق 2010کے اوائل میں ہی حکومت کو اس کا علم ہو گیا تھا کہ چین این ایس سی این آئی ایم کے علاوہ بھی شمال مشرقی خطہ کی کئی دیگر دہشت گرد تنظیموں سے پینگیں بڑھانے کی کوشش کے ساتھ ساتھ انہیں ہر قسم کی ٹریننگ بھی دے رہا ہے۔گذشتہ سال بھی حکومت کو یہ اطلاع ملی تھی کہ منی پور میں سرگرم دہشت پسند تنظیم یو این ایل ایف کو چین کی جانب رخ کر کے رکھے گئے لمبی دوری تک مار کرنے والے میزائیلوں کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کی ذمہ داری دی گئی تھی۔
For news in Urdu visit our page : Latest News, Urdu News

0 comments:

Post a Comment