Wednesday, February 16, 2011

سپریم کورٹ نے نٹھاری کیس میں کولی کی سزائے موت برقرار رکھی


نئی دہلی : سپریم کورٹ نے نٹھاری ہلاکتوں کے وحشیانہ واقعات کے مجرم سریندر کولی کی سزائے موت بر قرار رکھی۔نوئیڈا کے نٹھاری گاﺅں میں قتل کیے گئے بچوں میں شامل رمپا ہلدر کیس میں کولی کو خصوصی عدالت اور الہٰ باد ہائی کورٹ نے سزائے موت سنائی تھی۔پنڈھیر کے نوکر کولی پر 14سالہ رمپا ہلدر کی عصمت دری اور پھر اسے قتل کرنے کا جرم ثابت ہوگیا تھا۔ سپریم کورٹ نے قتل کی ان وارداتوں کو دلخراش اور وحشیانہ فعل بتاتے ہوئے یہ سزائے موت برقرار رکھی۔سپریم کورٹ نے نٹھاری کیس میں ہی مونندر سنگھ پنڈھیر کو بری کرنے کے خلاف سی بی آئی کی اپیل کو معرض التوا میں رکھا ہے۔نٹھاری ہلاکتوں کے راز پر سے دسمبر 2009میں اس وقت پردہ اٹھا تھا جب کولی کے مکان مالکپنڈھیر کی رہائش گاہ کے باہر نالی میں کچھ انسانی اعضا پائے گئے تھے۔یہ انسانی اعضا نٹھاری گاﺅں کے قریب رہنے والی 19عورتوں اور بچوں کے تھے جنہیںپنڈھیر کی رہائش گاہ میں لا کر عصمت دری کے بعد قتل کر دیا گیا تھا۔
Read In English

For news in Urdu visit our page : Latest Urdu News, Urdu News


0 comments:

Post a Comment