Tuesday, January 25, 2011

حلیف پارٹیوں کے نکل جانے سے آئر ش حکومت زبردست سیاسی بحران سے دوچار


ڈبلن :جونئیر پارٹنروں کی علیحدگی اختیار کر لینے کی وجہ سے آئر لینڈ کی حکومت گرنے کی پوزیشن میں آگئی ہے۔ان پارٹیوں کے اس فیصلے سے وزیر اعظم برائن کووین پر مزید دباﺅبڑھ گیا ہے کہ وہ استعفیٰ دے کر 11مارچ سے پہلے انتخابات کرا دیں۔گرین پارٹی نے یہ کہتے ہوئے کہ وہ فیانا فیل پارٹی کے ساتھ مزید گذارہ نہیں کر سکتی حکومت سے علیحدگی اختیار کر لی۔جس کی وجہ سے حکومت اقلیت میں آگئی ہے اور عام چناﺅ جو کہ 11مارچ کو ہونا طے ہیں پہلے کرائے جا سکتے ہیں۔وزیر اعظم برائن کووین نے قیادت میں تبدیلی کے لئے اپنے ہی وزیر خارجہ کے مطالبہ کی وجہ سے ایک ہفتہ تک چلے سیاسی بحران کے بعد فیانا فیل پارٹی کی قیادت سے ستعفیٰ دے دیا تھا اسی وقت سے وہ کافی دباﺅ میں تھے کہ گرین پارٹی نے مخلوط حکومت سے علیحدگی اختیار کر کے ان کی مشکلات اور بڑھا دیں ۔ ملک کی مالی حالت کی روشنی میں یورپی یونین اور بین الاقوامی زر فنڈ سے رجوع کرنے کے فیصلہ کی وجہ سے پہلے ہی سے جاری سیاسی بحران گرین پارٹی کےفیصلہ سے اور بھی گہرا ہو گیا ہے۔مخلوط سرکار سے گرین پارٹی کے نکل جانے سے پارٹی کے فیصلہ سے متعلق تفصیل بتاتے ہوئے پارٹی لیڈر جان گارملی نے میڈیا کے نمائندوں سے کہا کہ ان کی پارٹی کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا تھا۔کووین نے،جو پارٹی قیادت سے مستعفی ہونے کے باوجود انتخابات تک برسر اقتدار رہنا چاہتے تھے، کہا کہ اب اہم بات یہ ہے کہ مالی بل پر مکمل توجہ دی جائے۔وزارت خزانہ کے حکام کو پیر کو اپوزیشن پارٹیوں سے ملاقات طے تھی تاکہ اس مالی بل کو منظور کرانے کے لئے طے شدہ مدت پر اتفاق ہو جائے کیونکہ یورپی یونین اور بین اقوامی زر فنڈ سے 67بلین یورو کا قرض لینے کے لئے یہ بل بہت اہم ہے۔
Read In English

0 comments:

Post a Comment