Thursday, January 13, 2011

حامد انصاری نے ایم جے اکبر کی تازہ ترین تصنیف ٹنڈر باکس کا اجراءکیا

M.J. Akbar Launches His Latest Book Tinderboxنئی دہلی : ہندوستان کے نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری نے یہاں ایک تقریب میں مشہور و معروف صحافی ایم جے اکبر کی کتاب ٹنڈر باکس: دی پاسٹ اینڈ فیوچر آف پاکستان (Tinderbox: The Past and Future of Pakistan)کا اجراءکرتے ہوئے کہا کہ یہ کتاب ایک خیال اور تصور پر محیط ہے جس میں وسعت اور گہرائی ہے۔ یہاں کے حیات ریجنسی میں ایک دلفریب شام میں اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نائب صدر جمہوریہ نے کہا کہ دلوں کو چھو لینے والے تجزیہ،بہترین پیرا گراف اور انداز تحریر، وسیع تحقیق اور دانشمندانہ رائے اور اندازوں پر مشتمل ایم جے کی یہ تصنیف اپنی نوعیت کی ایک بہترین اور بیش قیمت کتاب ہے۔انہوں نے اسے ونٹیج ایم جے سے تعبیر کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس کتاب کے عنوان نے میری اس میں دلچسپی پیدا کی اور مجھے تجحسس ہوا اور مجھے ٹینڈر باکس کی اصطلاح سمجھنے کے لئے ڈکشنری کا سہارا لینا پڑا۔ ڈکشنری سے جو تشریح ہوئی وہ یہ تھی کہ اس کا مطلب چقماق(جس کی رگڑ سے چنگاری نکلے)، آتشیں چھڑ اور آتش گیر مادہ سے بھراایک چھوٹا کنٹینر ہے جسے ایک ساتھ استعمال کر کے آگ سلگانے اور بھڑکانے کا کام لیا جاتا ہے۔مجھے قیاس گذرا کہ شائد مصنف کا ارادہ ایک آگ بھڑکانایا دھماکہ خیز بیان دینے کا ہے۔ایک بات نے جو مزید دلچسپی بڑھائی وہ اس کی ذیلی سرخی دی پاسٹ اینڈ فیوچر آف پاکستان تھی۔دونوں مرکزی خیال درست اور بہترین تحریری بحث پر محیط تھا۔موجودہ حالات میں اگرحال کاہر زاویہ سے مکمل طور پر تجزیہ کیا جائے تومستقبل کی پیش گوئی بار آور ہوگی۔اس کے لئے ضروری ہے کہ نسلی، علاقائی اور سماجی پہلوﺅں کی باریکی سے جانچ کیا جائے تاکہ حالات کا صحیح اندازہ ہو سکے۔
اس تقریب میں مرکزی وزیر مالیات پرنب مکھرجی اور سینئیر بی جے پی لیڈر و سابق نائب وزیر اعظم ایل کے آڈوانی نے بھی شرکت کی۔اس موقع پر دونوں پارٹیوں کے لیڈر اپنی پارٹی لائن اور دونوں پارٹیوں کے درمیان حائل خلیج سے قطع نظر کرتے ہوئے اسٹیج پر ساتھ ساتھ بیٹھے اور صحافت کی دنیا میں ایم جے اکبر کی بیش بہا خدمات کو سراہا۔مسٹر آڈوانی نے پاکستان میں بیتے اپنے بچپن کی یادیں بیان کرتے ہوئے اس ملک کے بارے میں، جو آج اپنی بقا کی جنگ لڑ رہا ہے، اپنی معلومات و تجربات کا ذکر کیا۔
اندیا ٹوڈے کے ایڈیٹر انچیف ارون پوری نے بھی صحافتی دنیا میں ایم جے اکبر کی خدمات کا اعتراف کیا۔ یہ کتاب جس میں پاکستان کی تاریخ بیان کی گئی ہے، ہارپر کولنس نے شائع کی ہے۔اس کتاب میں ایم جے اکبر نے تقسیم ہند کے اسباب و عوامل بیان کئے ہیں اور اس وقت کے حالات ، واقعات ، عوام اورقیام پاکستان کے خیال جیسے معاملات پر سیر حاصل روشنی ڈالی ہے۔اس کتاب میں ہزاروں سال کی تاریخ پر تحقیق، افکار و خیالات،موقع پرستوں،ظالموں اور غاصبوں،غارت گروں اور لٹیروں، جنرلوں اور علماءدین کا ذکر کیا گیا ہے اور اس کا آغاز شاہ ولی اللہ سے کیا ہے جنہوں نے ہندوﺅں اور ہندوازم سے اسلام کا تشخص بچانے کے لئے فاصلہ کا فلسفہ پیش کیا تھا۔
ایم جے اکبر انڈیا ٹوڈے اور ہیڈ لائنز ٹوڈے کے ایڈیٹوریل ڈائریکٹر ہیں اور دہلی و لندن سے شائع ہونے والے سنڈے گارجین کے ایڈیٹر بھی ہیں۔ایم جے ہندوستان کے سب سے زیادہ پڑھے جانے والے اور مقبول ترین مبصر اور تجزیہ نگار ہیں۔ان کی اس سے پہلے جو کتابیں منظر عام پر آچکی ہیں وہ سیج ویدھن: چیلنجز ٹو اے نیشنز یونیٹی،(پینگوئین1984)، نہرو: دی میکنگ آف انڈیا (وائیکنگ/پینگوئین 1989)رائٹ آفٹر رائٹ (پینگوئین 1990) کشمیر : بیہائنڈ دی ویل (پینگوئین 1992) دی شیڈ آف سورڈ: جہاد اینڈ دی کنفلیکٹ بٹوین اسلام اینڈکرسچینیٹی( روٹلیج اینڈ رولی2002) بائی لائن (رولی2004) اور بلڈ برادرس(رولی انڈیا)
Read In English

0 comments:

Post a Comment