Thursday, December 23, 2010

Sonia outlines action plan against corruption

کرپشن کے خلاف زبانی جمع خرچ نہیں بلکہ عمل سے کچھ کر کے دکھائیں گے: سونیا گاندھی

http://urdutahzeeb.net/current-affairs/news/sonia-outlines-action-plan-against-corruption


Sonia outlines action plan against corruptionنئی دہلی: کانگریس صدر سونیا گاندھی نے کہا کہ متحدہ ترقیاتی اتحاد(یو پی اے ) نے اپنے انتخابی منشور میں جو بھی وعدے کئے تھے انہیں اس نے پورا کیا ہے۔سونیا گاندھی نے یہاں براڑی کے وسیع و عریض میدان میں آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے مکمل اجلاس کے اختتامی خطاب میں مزید کہا کہ ان کی قیادت میں موجودہ حکومت نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)قیادت والی قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) سے زیادہ بہتر کارکردگی کا مظاہرہکیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر دونوں حکومتوں کی پرفارمنس کا موازنہ کیا جائے تو یو پی اے نے این ڈی اے سے کہیں زیادہ کامیابیاں حاصل کی ہیں۔انہوں نے کہا کہ یو پی اے حکومت کے ریکارڈ پر کوئی شک و شبہ نہیں ہونا چاہئے۔جب این ڈی اے سے موازنہ کی بات آئے گی تو یو پی اے کا ریکارڈ اس سے بہت بہتر نظر آئے گا۔مندوبین سے یہ وعدہ کرتے ہوئے کہ کانگریس ان لوگوں سے کسی قسم کی نرمی نہیں برتے گی جو کرپشن میں ملوث ہیں،سونیا گاندھی نے کہا کہ پارٹی اپنے عمل سے یہ دکھا دے گی کہ کرپشن سے کس طرح نپٹا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کرپشن کا ڈٹ کر سامنا کیا جائے گا اور پارٹی محض قول سے نہیں عمل سے ثابت کر دے گی کہ کرپٹ عناصر سے وہ کیسی سختی سے پیش آتی ہے اور کیسے نمٹتی ہے۔انہوں نے بی جے پی پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس اور اس کی قیادت کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے سیاسی مخالفین کو جارحانہ انداز سے زیر کرنا ہوگا۔ اپوزیشن اور خاص طور پر بی جے پی کی جانب سے جو بھی الزامات عائد کئے جارہے ہیں یکسر بے بنیاد اور بے سر و پا ہیں اور حقیقت کا ان سے دور دور تک کوئی واسطہ نہیں ہے۔پارٹی ورکروں کومتحد رہنے کی تلقین کرتے ہوئے سونیا گاندھی نے کہا کہ اتحاد، محنت ، جفا کشی اور نظم و ضبط کا کوئی متبادل نہیں ہے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ آل انڈیا کانگریس کمیٹی پارٹی اور حکومت کے درمیان مسلسل رابطہ یقینی بنانے کے لئے ایک کو آرڈی نیشن کمیٹی تشکیل دے گی۔انہوں نے تمام ریاستی یونٹوں سے بھی کہا کہ وہ سرکاری پروگراموں پر عمل آوری کی نگرانی کے لئے ایک نگراں کمیٹی قائم کریں اور ہر تین ماہ بعد جائزہ رپورٹ پیش کریں۔سونیا گاندھی نے کہا کہ ایک طرف یو پی اے ہے جس نے اپنے وزیروں کو بد عنوانیوں کو مرتکب پا کر انہیںبر طرف کر دیا اور دوسری جانب بی جے پی ہے جو کرناٹک میں اپنے وزیر اعلیٰ کی بد عنوانیوں سے صرف نظر کر کے اس کو بر سر اقتدار رکھے ہوئے ہے۔انہوں نے وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ کے اس عزم اور یقین دہانی کو سراہا کہ وہ کرپشن کے خاتمہ کے لئے ان کے (سونیا)پانچ نکاتی منصوبہ پر عمل آوری کریں گے۔ انہوں نے کہا گذشتہ ساڑھے چھ سال کے دوران یو پی اے سرکار نے جس طرح ہر محاذ پر کامیابی حاصل کی ہے اس پر اسے فخر ہے اور یہ فخر بے وجہ نہیں ہے۔یہ یو پی اے کی کامیابیوں کا ریکارڈ ہے جس سے ہر پارٹی ورکر کا سر فخر سے بلند ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ ہمارا فرض ہے کہ ہم اپنی ان کامیابیوں کی تشہیر کریں اور عوام کو اس سے واقف کرائیں۔انہوں نے پارٹی ورکروں سے کہا کہ وہ کرپشن پر بی جے پیکے دوہرے معیار کو بے نقاب کرنے کے لئے جن جاگرن ابھیان چلائیں۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں ہر اسمبلی حلقہ میں کم از کم ایک جلسہ عام ضرور ہونا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ مختلف ناموں سے مختلف ریاستوں میں کانگریس حکومتیں قائم ہیں اور یہ ریاستی حکومتیں ہمارے ان پروگراموں کا کریڈٹ لے رہی ہیں جن کے لئے پارٹی کے انتخابی منشور میں وعدہ کیا گیا تھا۔
Read In English

0 comments:

Post a Comment