Tuesday, December 28, 2010

اسرائیل ترکی سے ہرگز معافی نہیں مانگے گا: نتن یاہو

Netanyahu rules out apology to Turks over flotillaیروشلم: غزہ امداد لے جانے والےجہاز فلو ٹیلہ پر اسرائیلی حملہ پر ، جس میں 9ترکی رضا کار بھی ہلاک ہوئے تھے، اسرائیل نے ترکی سے معافی مانگنے سے انکار کر دیا ۔وزیر اعظم بنجامن نتن یاہو نے ایک پرائیویٹ ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہاکہ اسرائیل معافی تو نہیں مانگے گا البتہ ترکی سے اظہار افسوس ضرور کرے گا۔انہوں نے کہا کہ اسرائیلی فوجیوں نے اپنیذمہ داری نبھائی ہے ۔ نتن یاہو کا یہ بیان اسرائیل کے وزیر داخلہ اویگدور لبرمین کی جانب سے ترکی کے اس مطالبہ کو مسترد کرنے کے بعد آیا جس میں ترکی نے کہا تھا کہ اگر تعلقات سدھارنے ہیں اسرائیل اس حرکت کی معافی مانگے۔انہوں نے یہاں تک کہہ دیا تھا کہ اصل میں معافی تو ترکی کو مانگنی چاہئے کہ وہ دہشت گردی کی حمایت کرتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل ہرگز 31مئی کے واقعہ کی معافی نہیں مانگے گا۔اپنے وزیر داخلہ کے بیان سے متعلق استفسار کئے جانے پر نتن یاہو نے کہا کہ دیگر وزیروں کی طرح یہ بھی ان کی ذاتی رائے ہے۔انہوں نے کہا ان کی مخلوط سرکار میں مختلف نظریات کے لوگ ہیں لیکن وزیر اعظم کے خیالات و نظریات حکومت کے نظریات ہیں۔یاد رہے کہ اسرائیل اور ترکی کے تعلاقات اس وقت متاثر ہو گئے تھے جب اسرائیلی ناکہ بندی والے فلسطینی علاقہ میں امداد بہم پہنچانے والے جہاز پر اسرائیلی فوجیوں نے حملہ کر دیا تھا۔

For information in Urdu visit our Blog : Composite Culture, Latest Urdu News , Urdu News

0 comments:

Post a Comment