Thursday, September 30, 2010

Gyanpith Award-2008: Urdu poet Shaharyar

اس شمع فروزاں کے پروانے ہزاروں ہیں!

http://urdutahzeeb.net/film-and-music/film/gyanpith-award-2008-urdu-poet-shaharyar-2

شہر یار کو حکومت ہند کا 2008 کا گیان پیٹھ ایوارڈ
ایس اے ساگر
Gyanpith Award-2008: Urdu poet Shaharyarحالانکہ بات پرانی ہے ۔ اب سے تقریباّ بیس برس (1981)پرانی جو امراؤجان ریلیزہوئی لیکن آج بھی جب:
ان آنکھوں کی مستی میں میخانے ہزاروں ہیں
کی صدا ریڈیو اور ٹی وی سے بلند ہوتی ہے تو شائقین جھوم اٹھتے ہیںجس نے ثابت کردیا ہے کہ اردو ادب بالخصوص شاعری کی حکمرانی ہر خاص و عام پر آج بھی ہے اور اس شمع فروزاں کو بجھاناآسان کام نہیں ہے۔اس کلام کے تخلیق کار ہیں اخلاق محمد خان عرف شاعر شہریار جنھیںحکومت ہند کے مؤقر ادبی انعام گیان پیٹھ 2008 کیلئے منتخب کیا گیا ہے۔ یہ انعام ہر سال کسی ایک ادیب کو دیا جاتا ہے اور آزادی سے اب تک اردو کے حصے میں صرف تین ایوارڈ آئے ہیں :فراق، سردار جعفری اور قراةالعین حیدر۔
اب تو خوابوں ہی میں ممکن ہے مکاں کی تعمیر
اپنے نقشے کے مطابق یہ زمیں کچھ کم ہے
اسم اعظم ، ساتواں در ، خواب کا دربند ہے اور ہجر کے موسم کے شاعر شہر یار کو گیان پیٹھ جیسا ملک کا سب سے بڑا اد بی ایوارڈ دئے جانے پر اردو دنیا مسرور اور نازاں ہے۔اردو زبان کو یہ اعزاز چوتھی مرتبہ حاصل ہوا شہر یار خان ادبی حلقوں میں جتنے مقبول ہیں اتنے ہی عوام میں مشہور ہیں۔ان کے لکھے ہوئے فلمی گیت بھی بے حد مشہور ہوئے۔اردو کے ممتاز شاعر شہریار خان کے کے اعزاز میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔اس کی صدارت پروفیسرمحمد زاہد نے کی تمام ممبروں نے متفقہ طور پر پروفیسر شہر یار خان کو مبارکباد پیش کیں۔ شہر یار 16جون 1936کوبریلی ضلعے کے ایک گاؤں میں بسے راجپوت گھرانے میں پیدا ہوئے، بی اے اور ایم اے علی گڑھ سے ہی کیا، اور 1966 سے وہیں شعبہ اردو میں لکچرر بن گئے اور 1996 میں ریٹائر ہوئے، سبکدوشی کے وقت وہ پروفیسر اور صدر شعبہ اردو تھے۔ ان کی اب تک پانچ کتابیں منظر عام پر آ چکی ہیں۔ اسم اعظم، ساتواں در، خواب کا در بند ہے،ہجر کے موسم، اور نیند کی کرچیں۔ اس سے پہلے ’خواب کا در بند ہے ‘ کے لیے ان کو 1987 میںساہتیہ اکادمی انعام بھی دیا جا چکا ہے ۔یقینا شہریار گیان پیٹھ ایوارڈ کے مستحق تھے۔اردو حلقوں میں کہا جاتاہے کہ مزید مستحقین بھی ہیں جو محروم رہے ہیں جن میں شمس الرحمٰن فاروقی، جیلانی بانو، اقبال متین وغیرہ کے نام شامل ہیں۔
Read In English

For information in Urdu visit our Blog : Composite Culture, Latest Urdu News , Urdu Tahzeeb

0 comments:

Post a Comment